گھرکیلئے بینکوں سے قرض لینےوالوں پراضافی بوجھ نہ ڈالا جائے، عمران خان

35


اسلام آباد (اردوپوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 26 نومبر2020ء)  وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ گھر کیلئے بینکوں سے قرض لینے والوں پر اضافی بوجھ نہ ڈالا جائے، گیس کے نئے کنکشنز کا آسان طریقہ کار وضع کیا جائے، ملک میں بجلی کی کوئی کمی نہیں، نئے کنکشنز دینے میں تاخیر کا کوئی جواز نہیں ہونا چاہیے۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم کی زیرصدارت رابطہ کمیٹی ہاوَسنگ اور کنسٹرکشن و ڈویلپمنٹ کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں مشیرعشرت حسین، گورنرسندھ، معاون خصوصی شہبازگل، ذوالفقاربخاری سمیت دیگر اعلیٰ سرکاری عہدیداران نے بھی شرکت کی۔ چاروں صوبائی چیف سیکریٹریز بھی ویڈیولنک کے ذریعے شریک ہوئے۔ اجلاس میں توانائی اور پٹرولیم ڈویژنز کے نئے تعمیراتی منصوبوں پر بریفنگ دی گئی۔

()

بجلی اور گیس کنکشنز کی فراہمی میں آسانیاں پیدا کرنے، نیا پاکستان ہاوَسنگ اسکیم کیلئے باہمی تعاون سے متعلق بھی بریفنگ دی گئی۔

بریفنگ میں بتایا گیا کہ درخواست گزاروں سے متعلق ضروری معلومات بینکوں کودی جائیں گی۔ سیکرٹری پیٹرولیم نے کہا کہ گیس کے نئے کنکشنز کیلئے آن لائن طریقہ کار وضع کیا جا رہا ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ اس وقت ملک میں بجلی کی کوئی کمی نہیں۔ بجلی کے نئے کنکشنز دینے میں تاخیر کا کوئی جواز نہیں ہے۔ وزیراعظم نے این اوسیز اور منظوری کا طریقہ کارآسان بنانے کی ہدایت کی۔ انہوں نے کہا کہ نیا پاکستان ہاؤسنگ سے متعلق کہا کہ گھرکیلئے بینکوں سے قرض لینے والوں پر اضافی بوجھ نہ ڈالا جائے۔ مزید برآں وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت کراچی ٹرانسفارمیشن پلان سے متعلق اجلاس ہوا۔ جس میں وزیرریلوے شیخ رشید، اسدعمر، فیصل واوڈا اور مشیرخزانہ حفیظ شیخ شریک ہوئے۔ اجلاس میں آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ نے بھی شرکت کی۔ اجلاس کو ان منصوبوں پر اب تک ہونے والے پیشرفت سے آگاہ کیا گیا۔ اجلاس میں بریفنگ کے دوران کہا گیا کہ کراچی ٹرانسفرمیشن پلان کے تحت 100 سے زائد منصوبوں کی منصوبہ بندی کی جاچکی ہے۔ منصوبے 1.117 ٹریلین روپے کی لاگت سے مکمل ہوں گے۔ منصوبوں کو تکمیلی مراحل کے اعتبارسے تین حصوں میں تقسیم کیا گیا ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے کےفور منصوبے کی استعداد سے متعلق سفارشات مرتب کرنے کیلئے کمیٹی بنانے کی ہدایت کی۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ کراچی کے مسائل کی مستقل بنیادوں پر حل انتہائی ضروری ہے۔ کراچی میں برساتی پانی سے ہونے والے نقصانات کا سبب نالوں پر غیرقانونی تعمیرات ہیں۔ کراچی میں تجاوزات ہٹانے سے پہلے وہاں کے مستحق مکینوں کیلئے پیشگی متبادل انتظامات کو یقینی بنایا جائے۔



Source link

Credits Urdu Points