گونگی ماں پر قیامت بیت گئی ، 7 سالہ بیٹی کو منہ بولے بھائی نے جنسی زیادتی کا نشانہ بناکر قتل کردیا

41


بچی ملزم کو ’ماموں جی‘ کہتی تھی ، جس نے 10 روپے کا لالچ دے کر بچی کو ہوس کا نشانہ بنایا اور جرم چھپانے کے لیے قتل کردیا اور لاش کوڑے کے ڈھیر پر پھینک دی ، اردو پوائنٹ تفصیلات منظر عام پر لے آیا

ساجد علی
ہفتہ نومبر
17:29

گونگی ماں پر قیامت بیت گئی ، 7 سالہ بیٹی کو منہ بولے بھائی نے جنسی زیادتی ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 نومبر2020ء) 7 سال کی بچی نبیلہ کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد بے دردی سے قتل کردیا ، جس کے بعد اس کی لاش کو کوڑے کے ڈھیر پر پھینک دیا ، ملزم بچی کی ماں کا منہ بولا بھائی تھا جس کو نبیلہ بھی ماموں جی کہہ کر بلاتی تھی ، اردوپوائنٹ واقعے کی تفصیلات سامنے لے آیا۔ بتایا گیا ہے کہ بچی نے اپنے ماموں سے بازار سے چیز لینے کے لیے 10روپے طلب کیے، ملزم ندیم نے ’اردوپوائنٹ‘ کو بتایا کہ بچی اس کے پاس آئی اور اس سے 10 روپے مانگے ، جس پر اسے پیسے دیے وہ چیز لے کر آئی اور گلی میں کھیلنے لگی،اس کے بعد ملزم نے اسے بلایا اور کمرے میں لے گیا اوراس کے ساتھ جنسی زیادتی کی، اس دوران بچی روتی رہی اور چیختی چلاتی رہی کہ’مجھے چھوڑ دو‘ لیکن ملزم نے اس کی ایک نہ سنی اور اس کے منہ پر ہاتھ رکھ دیا۔

()

اردو پوائنٹ کی میزبان تہمینہ شیخ کو ملزم ندیم نے بتایا کہ بچی کے ساتھ جنسی زیادتی صبح 9 بجے کی اس وقت بچی کی ماں گھر سے باہر گئی ہوئی تھی جب کہ دیگر افرادمیں سے بھی کوئی اس وقت گھر پہ موجود نہیں تھا ، زیادتی کے بعد بچی ہوش میں تھی اور مسلسل رورہی تھی اور چیخ رہی تھی جس کی وجہ سے اس کا گلا دباکر اسے قتل کردیا اور اپنے بیڈ پر ہی چھوڑ کر اپنے کام پر چلاگیا جہاں سے وہ رات 2 بجے واپس آیا، اس وقت سب گھر والے سو رہے تھے تو بچی کو اپنے کندھے پر اٹھاکر باہر لے گیا اور کچرے کے ڈھیر پر پھینک دیا۔ 

 مزید انکشافات ملاحظہ کریں نیچے دی گئی ویڈیو میں 

متعلقہ عنوان :



Source link

Credits Urdu Points