بھائی کی بہن سے زیادتی و قتل کا معاملہ ، مزید انکشافات سامنے آ گئے

42


نوابشاہ (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین ۔20 نومبر 2020ء) نوابشاہ کے علاقے جام صاحب میں چند روز قبل ایک دل دہلا دینے والا واقعہ پیش آیا تھا جب ایک بچی کی جلی ہوئی لاش کھیتوں سے برآمد ہوئی تھی۔ں 13 سالہ لڑکی کا قاتل اس کا سگا بھائی نکلا ۔ ملزم کافی عرصے سے بہن کو زیادتی کا نشانہ بنا رہا تھا، والدین کو پتہ چلنے کے خوف سے قتل کرکے لاش کھیتوں میں پھینک دی تھی ۔ 13 سالہ لڑکی نمرا کے اغوا کے بعد قتل کا واقعہ سامنے آیا تھا جسس کے بعد مقامی پولیس نے تحقیقات شروع کردی تھیں ، پولیس نے لواحقین سے تفتیش شروع کردی۔ جلد ہی عہدیداروں نے یہ نتیجہ اخذ کیا کہ تمام شواہد بچی کے بھائی کی طرف جا رہے ہیں۔ جام صاحب پولیس نے تفتیش کے بعد لڑکی کے بھائی کو گرفتار کر لیا ۔ایس ایس پی تنویر تونیو نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ پولیس نے ملزم کو کال ریکارڈ اور ڈیٹا کی مدد سے گرفتار کیا گیا۔

()

گرفتاری کے بعد ملزم نے بچی سے زیادتی اور قتل کا اعتراف کر دیا۔ ۔اب اس حوالے سے مزید انکشافات بھی سامنے آئے ہیں۔بتایا گیا ہے کہ سفاک بھائی کئی سالوں سے بہن کو زیادتی کا نشانہ بنا رہا تھا۔نوجوان کا کہنا تھا کہ اس نے اس لیے اپنی بہن کو موت کے گھاٹ اتارا کیونکہ اسے ڈر تھا کہیں وہ والدین کو نہ بتا دے کہ میں نے طویک عرصہ سے اس کے ساتھ ناجائز تعلق قائم کر رکھا تھا۔پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ جس رات نمرہ نے تعلقات مزید قائم رکھنے سے انکار کرتے ہوئے دھمکی دے کہ وہ والدین کو بتا دے گی تب ملزم نے اسے قتل کرنے کا فیصلہ کیا۔نوجوان نے اپنا جرم چھپانے کے لئے اسے قتل کیا۔واضح رہے کہ گزشتہ دنوں جام صاحب کی رہائشی 13 سالہ لڑکی نمرا گھر سے اچانک لاپتا ہوگئی تھی، مقتولہ کی لاش مکھی گوٹھ کے قریب کھیتوں سے برآمد ہوئی تھی۔ورثا نے پولیس سے مطالبہ کیا تھا کہ ہماری کسی سے کوئی دشمنی نہیں ہے، پولیس قاتلوں کو گرفتار کرکے انصاف فراہم کرے۔ نوابشاہ واقعے کا ڈراپ سین اس وقت سامنے آیا جب جہاں لڑکی کا قاتل اس کا اپنا بھائی نکلا۔



Source link

Credits Urdu Points