اینکر پرسن جمیل فاروقی کا انکشاف

79
اینکر پرسن جمیل فاروقی کا انکشاف

پشاور(اردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین 1 جنوی 2020) : مانسہرہ میں بچے کے ساتھ زیادتی کرنے والا شخص مفتی کفایت اللہ کے گھر سے گرفتار ہوا۔ تفصیلات کے مطابق سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر پیغام دیتے ہوئے اینکر پرسن جمیل فاروقی کا کہنا ہے کہ قاری شمس الدین نے سابق رکن قومی اسمبلی مفتی کفایت اللہ کے گھر میں پناہ لی ہوئی تھی اوراسے اس شرط پر پولیس کے حوالے کیا گیا کہ اس بات کو صیغہ راز میں رکھا جائیگا۔ تاہم انھوں نے کہا مفتی ’وکی‘ کے گھر سے ایک اور ’وکی‘ کی بر آمدگی نہیں ہوئی۔   یاد رہے کہ مانسہرہ پولیس نے10سالہ بچےکو زیادتی کا نشانہ بنانے والے ملزم قاری شمس الدین کو گرفتار کرلیاتھا، ملزم 23 دسمبر سے روپوش تھا، ملزم کو سابق اراکین اسمبلی مفتی کفایت اللہ اور محمد اقبال نے پولیس کے حوالے کیا تھا۔

()

تھانہ پھلڑہ کی پولیس نے مدرسے میں10سالہ معصوم پھول کو اپنی حوس کا نشانہ بنانے والے درندہ و شیطان صفت ملزم قاری شمس الدین کو باقاعدہ گرفتار کرلیا تھا۔

بتایا گیا تھا کہ سابق اراکین اسمبلی مفتی کفایت اللہ اور محمد اقبال نے ملزم کو پکڑ کر پولیس کے حوالے کیا تھا۔ بچے سے زیادتی کرنے والا ملزم 23 دسمبر سے روپوش تھا۔ ڈی آئی جی ہزارہ کا کہنا تھا کہ مدرسے میں 10 سالہ بچے سے زیادتی میں ملوث مبینہ پانچ معاون ملزمان گرفتار کو پہلے ہی گرفتار کیا جاچکا تھا۔
جبکہ غیر رجسٹرڈ مدرسے کو سیل بھی کردیا گیا تھا۔
دوسری جانب 10 سالہ بچے کے ساتھ زیادتی کی میڈیکل رپورٹ میں بھی تصدیق ہوگئی تھی۔ پولیس نے بتایا تھا کہ میڈیکل رپورٹ میں طالبعلم پر جنسی زیادتی اور تشدد ثابت ہوگیا تھا، رپورٹ کے مطابق بچے کو شدید تشدد کا نشانہ بنایا گیا اور بچے کی دائیں اور بائیں کہنی پر بھی زخم کے نشانات ہیں اور بچے کی آنکھ میں سوجن اور خون کے نشانات بھی ہیں۔ یاد رہے مانسہرہ کے گاؤں ٹھاکرا میرا میں ایک مدرسے میں پڑھنے والے دس سالہ بچے کو اس مدرسے میں پڑھانے والے معلم شمس الدین اور تین دیگر نامعلوم افراد نے زیادتی کا نشانہ بنایا۔
مدرسے کے قاری نے 10 سالہ بچے کے ساتھ 100 مرتبہ سے زائد زیادتی کا نشانہ بنایا،درد کے باعث بچے کی آنکھوں سے آنسووں کے بعد خون رسنے لگا۔ بچے کو ایوب میڈیکل کیمپلیکس میں منتقل کر دیا گیا ہے، جہاں بچے کی حالت تشویش ناک بتائی جاررہی ہے۔

Source link

Credits Urdu Points