ذرا نم ہو تو یہ مٹی بڑی زرخیز ہے ساقی۔۔۔

12


اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 09 مارچ 2021ء)  یہ بات تو طے ہے کہ ٹیلنٹ کسی کا محتاج نہیں ا ور دوسری بات یہ کہ محنت کرنے والے کے قدم کامیابی ضرور چومتی ہے،مستقل مزاجی اور مصمم ارادہ جب کسی نے کیاہواور منزل پر پہنچے کا تہیہ بھی کررکھا ہواور اس ساری تگ و دو کے دوران اس کے قدم بھی نہ ڈگمگائیں تو پھر ایسے محنتی شخص کے لیے آسمان پر کمنڈ ڈالنا ذرا بھی مشکل نہیں ہوتا کہ مٹی اگر اس نوجوان کو نم مل جائے تو اس پر ہل چلا کر بیج ڈالنے اور اس سے پھل کشید کرنے میں پاکستانی ٹیلنٹڈ نوجوانوں کی کمی نہیں۔ایسا ہی ایک بہترین اور چشم کشا واقعہ پیش آیا ہے کہ امریکی ادارے کی طرف سے پاکستانی نوجوان کو قابل فخر اعزاز سے نواز دیا گیا۔ پاکستان کا نوجوان سائنسدان جسے ملک کی کسی یونیورسٹی نے ایک سال تک داخلہ نہ دیا اسے بین الاقوامی امریکی ادارے لیب روٹ نے ینگ سائنٹسٹ کے ایوارڈ سے نواز دیا۔

()

ذرائع کے مطابق ایبٹ آباد کے عمیر مسعود کو لیب روٹ نے یہ اعزاز دو الگ الگ سائنسی تحقیقات پر دیا ہے۔

یہ دو مقالے انھوں نے انٹرنیشنل کانفرنس آف مالیکیولر بیالوجی اینڈ بائیو کمیسٹری آسٹریلیا اور انٹرنیشنل کانفرنس آف ٹشو اینڈ ری جنریٹو میڈیسن امریکا میں پیش کیے تھے۔ عمیر مسعود کامسیٹس یونیورسٹی ایبٹ آباد میں بایو ٹیکنالوجی کے چوتھے سمیسٹر کے طالب علم ہیں۔عمیر مسعود نے اپنی تحقیق میں بتایا کہ موروثی بیماریوں کے شکار افراد کے مرض کا جلد اور سستے طریقے سے پتا چلایا جا سکتا ہے جبکہ کسی بھی جاندار کے جین حاصل کر کے کسی دوسرے کو منتقل کیے جا سکتے ہیں۔یہ پہلا واقعہ نہیں بلکہ اس سے قبل بھی پاکستانی نوجوانوں کو بہترین اعزاز ا سے نوازا گیا ہے۔



Source link

Credits Urdu Points